’’ اپوزیشن کے متفقہ امیدوار نے ترک خاتون اول کا ہار چرایا‘‘حیران کن دعویٰ

اسلام آباد(آن لائن /این این آئی ) وزیر اعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل  نے کہا ہے کہ  سپریم کورٹ کا  تاریخی  فیصلہ آیا ہے، اس فیصلے کا پوری قوم کا فائدہ ہو گا، تاریخی فیصلہ ہو گیا کہ بیلٹ پیپر کو ہمیشہ خفیہ نہیں رکھا جا سکے گا،اپوزیشن کو ایسا فیصلہ آنے کا ادراک نہیں تھا ۔میڈیاسے گفتگو  کرتے ہوئے شہبازگل نے کہا کہ پی ٹی آئی کے ارکان کو آفرز کی جا رہی ہیں۔ اپوزیشن کے

متفقہ امیدوار نے ترک خاتون اول کا ہار چرایا۔خرید و فروخت کی کوششیں کی جارہی ہے مگر ان کو ناکامی ہو گی۔عمران خان کے موقف کو آج تقویت ملی ہے،شہباز گل کا کہناتھا  الیکشن کمیشن پر ہمیں مکمل اعتماد ہے، ہمارے موقف کو پنجاب میں تقویت ملی۔ قبل ازیں شہباز گل نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک چار سال تک چار حلقے کھلوانے کیلئے احتجاج کرتی رہی ۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی شہباز گل نے کہا ہے کہ تحریک انصاف 4سال تک 4حلقے کھلوانے کیلئے احتجاج کرتی رہی ۔ یہاں پاکستان مسلم لیگ ن کے دو دن کے رونے پر وزیراعظم عمران خان نے دوبارہ الیکشن کیلئے اپنے ہی امیدوار کو ہدایت جاری کر دیں ہیں ۔ انکا کہنا تھا کہ یہ ہوتاہے لیڈر اور لیڈرشپ،جو جنرل جیلانی کے گملے میں پلے بڑے ہوں وہ کیا جانیں بہادری کو، باقی گیدڑ تو بھرے پڑے ہیں لندن سے لاہور تک۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی شہباز گل نے کہا ہے کہ ہم دوبارہ الیکشن کرانے کیلئے تیار ہیں۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہباز گل نے اپوزیشن کے دوبارہ الیکشن کروانے کے مطالبے پر کہا کہ ڈسکہ والا الیکشن ہم جیت گئے ہیں، ڈسکہ الیکشن دوبارہ کرانے کی بات عجیب ہے، ہم ہمیشہ ہر عدالت اور ہر محکمہ کا فیصلہ تسلیم کرتے ہیں۔شہباز گل نے پاکستان مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب سے متعلق کہا کہ مریم اورنگزیب صاحبہ جھوٹ پر جھوٹ بولتی ہیں، رات کے ایک بجے تک تو کہتے تھے جیت رہے ہیں، احسن اقبال آر او کے دفتر میں ہی بیٹھے تھے۔شہباز گل نے کہا کہ اپوزیشن کا کام ہے رونا، عمران خان کا کام ہے ان کا اصل چہرہ دکھانا۔انہوں نے کہا کہ ایک نسل نے پاکستان کو بنایا اور ایک نے کھایا، اپوزیشن دھاندلی کا کہتی ہے، عمران خان تو آیا ہی دھاندلی ختم کرنے ہے۔شہباز گل نے کہا کہ کچھ لوگ تو فخر سے کہتے ہیں ہم نے ووٹ خریدے، ہماری پارٹی میں پیسے لینے والوں کو سزا دی گئی، پچھلے دور میں ضمنی الیکشن میں سرکاری مشینری استعمال کی جاتی تھی۔‎

. ’’ اپوزیشن کے متفقہ امیدوار نے ترک خاتون اول کا ہار چرایا‘‘حیران کن دعویٰ ..

dadaddadd

اپنا تبصرہ بھیجیں