مودی کو مس کالیں کون مارتا تھا،کیا وہ غدار ہے؟ ن لیگ بھی وزیراعظم کیخلاف کھل کر میدان میں آ گئی

لاہور(آن لائن)مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ نواز شریف کے خلاف اگر الزامات بند نہ کیے تو ہم بھی جواب دیں گے،نواز شریف نے کبھی ملک اور قوم کی عزت پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا،پیمرانے ایک غیر قانونی اور غیر آئینی سرکلرز جاری کیا گیا جسے نہیں مانتے،یہ الزامات ہمارے لئے نئے نہیں ہیں، ہماری جدوجہد اب رکے گی نہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں

نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔مریم اورانگزیب نے کہا کہ ملک کا وزیر اعظم جو گفتگو کرتا ہے اسے پوچھیں کہ اس کا ایجنڈا کیا ہے؟اس وقت ملک منظم کرپٹ ٹولہ مسلط ہے اس لیے عوام کو ریلیف نہیں دینا،آر ٹی ایس کو بٹھاکر اس کرپٹ ٹولے کو ملک پر مسلط کیا گیا جو قومی سلامتی کیلئے بڑا خطرہ ہے،یہی کرپٹ عناصر کبھی سیاست دانوں کو، کبھی بیورو کریٹس اور کبھی میڈیا کو انتقامی کارروائیوں کا نشانہ بناتا ہے،سیاسی مخالف کو غدار قرار دینے کا بیانیہ بھی اسی ٹولے نے استعمال کیا،اب تحریک انصاف کی بجائے کرائے کے ترجمان نواز شریف کے پیچھے لگا دیئے گئے ہیں،یہ حکومت اب ہمارے لیے غیر متعلقہ ہوچکی ہے، کرائے کے ترجمان اور ٹٹو خود کتنے محب وطن ہے انکے بارے میں عوام جانتی ہے،قوم ان سے سوال کرے کہ وہ شخص جس نے ملک کو ایٹمی قوت بنایا،وہ شخص جو وزیراعظم تھا تو واجپائی پاکستان آئے کیونکہ اس وقت ملکی سلامتی مضبوط تھی،پاکستان ایٹمی قوت بن چکا تھا اور ہمسائیہ ممالک کی مجبوری تھی کہ وہ یہاں آتے،مودی چل کر پاکستان آیا اور اس وقت پاکستان ایٹمی اور معاشی طور پر مضبوط تھا،اس وقت پاکستان مین سیاست، معیشت اور عوام مضبوط تھے،اب ملک پر سلیکٹڈ وزیراعظم مسلط ہے اور مودی کے جیتنے پر کشمیر کا مسئلہ حل کرنے کی بات کرتا ہے،اس کے بعد سقوط کشمیر ہوجاتا ہے اور انسانی حقوق پامال کردیئے جاتے ہیں،

اور مودی کو فون کیا جاتا ہے مگر وہ فون تک نہیں اٹھاتا، اب کس کو غدار قرار دیا جائے،ہم کسی کو غداری کا سرٹیفیکیٹ دیں، مگر تاریخ میں سب کچھ درج ہوگا،جب مودی فون نہیں اٹھاتا تو موجودہ۔کابینہ میں ماتم شروع ہوجاتی ہے،غداری کے فتووے فاطمہ جناح، حسین شہید سہروردی، ذوالفقار علی بھٹو، بے نظیر بھٹو، نواز شریف، احمد فراز اور عاصمہ جہانگیر کو دیئے گئے، جس نے

امریکہ اور ایران میں بیٹھ کر پاک فوج پر القاعدہ بنانے کا الزام لگایا، تو بتایا جائے غدار کون ہے؟عدلیہ کے خلاف بات ٹاک شو میں بات کی مگر کوئی پوچھنے والا نہیں،سبھی کا خون شامل ہے اس مٹی میں، کسی کے باپ کا پاکستان نہیں،آج شہیدوں کے خون جواب مانگتا ہے، زبان بندی کا جواب دینا ہوگا،نواز شریف کہہ چکے ہیں جس سیاست میں وقار اور عزت نہیں اس سیاست کی ضرورت

نہیں ہے،شہباز شریف قوم، جمہوریت کے ساتھ کھڑا ہے اس لیے اس کو گرفتار کرلیا گیا،جنہوں نے آٹے، چینی اور ادوایات پر ڈاکہ ڈالا وہ کابینہ میں بیٹھے ہیں،جو منتخب وزیراعظم کی خلاف سازش کرے وہ غدار ہوتا ہے،مشرف آئین پاکستان کا غدار ہے، عوام فیصلہ کرچکی ہے کون غدار اور کون وفادار ہے، نواز شریف کو کسی قسم کا حب الوطنی کا سرٹیفیکیٹ نہیں چاہیے،اگر یہ غداری کا سلسلہ

بند نہ ہوا تو پھر ہم نام لے لے کر بتائیں گے غدار کون ہے اور کس نے غداری کیسے کی،جو لوگ غداری کا بیانیہ بنارہے ہیں اصل میں ملک کے وفادار وہ نہیں ہیں،اگر اداروں کو گندی سیاست میں گھسیٹنے کا سلسلہ بند نہ ہوا تو پھر ہم جواب دینگے،پیمرانے ایک غیر قانونی اور غیر آئینی سرکلرز جاری کیا گیا جسے نہیں مانتے،یہ الزامات ہمارے لئے نئے نہیں ہیں، ہماری جدوجہد اب رکے گی

نہیں،11 اکتوبر کو پہلا جلسہ کوئٹہ میں ہوگا اور باقاعدہ پی ڈی ایم اپنی مہم شروع ہوگی،ہم نے عمران خان کے خالی خولی دھرنے کو بھی دکھایا ہم نے آزادی اظہار پر پابندیاں نہیں لگائیں،ہماری لڑائی ان سے ہے جو آئینی حقوق پامال کرتے ہیں، سلیکٹڈ مسلط کرتے ہیں اور الیکشن چوری کرتے ہیں،2018 میں آر ٹی ایس نظام کی خرابی کا منصوبہ بنایا گیا،ملک میں اس وقت بنیادی انسانی حقوق معطل

ہیں کیونکہ چور ٹولہ اس وقت ملک میں مسلط ہے،ایک ایسا ٹولہ جس نے عوامی حقوق ختم کر کے ملک پر طاقت کے ذریعے انتقال پر مبنی سیاست کر رہا ہے،سیاسی قائدین کو غدار اور انڈین ایجنٹ قرار کہا جا رہا ہے،کرایے کے ترجمانوں کو منظم طریقے سے نواز شریف کی عزت اور وقار کو نقصان پہنچانے کے لیے صبح سے شام شور کر رہے ہیں،خود دوسرے ملکوں کی شہرت لے کر یہاں

پاکستان سے وفاداری کی ناکام کوشش کر رہے ہیں ملک پر سلیکٹڈڈ وزیراعظم مسلط ہے،انہوں نے کہا کہ عمران خان نے کشمیر کا سودا کیا،مودی کے جیتنے کو مسئلہ کشمیر کے حل سے مشروط کیا،مودی کو مس کالز کون مارتا تھا،اس وقت کون غدار تھا،ہم کسی کو غدار نہیں کہیں گے،کشمیر کا سودا اس نے کیا غدار نوازشریف کو بنا دیا،ووٹوں کی چوری اور آئین سے انحراف کرنے والا

غدار ہوتا ہے،مشرف کو رعایت دی گئی تو اس وقت وزیر اعظم عمران خان تھا،غداری کے سرٹیفیکیٹ اس طرح نہ بانٹے جائیں،عمران خان نے جو کچھ کیا اس سے پوچھنے والا کوئی نہیں،ہمارے دور میں ملکی دفاع مضبوط تھا،جس سیاست میں عزت و وقار نہیں وہ ن لیگ کو قبول نہیں،آپنے پوری ن لیگ کو جیل میں ڈالنا ہے ڈال دیں،آٹا چینی دالیں اور ادویات چوری کرنے والے کابینہ میں

بیٹھے ہیں،عوام کو پتہ ہے کون محب وطن ہے کون غدار۔پوری پاکستانی عوام نوازشریف کی گواہی دے رہی ہے۔حکومتی رویے بند نہ ہوگے تو ہماری زبانیں بھی بند نہیں ہونگی،مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ اداروں کو سیاست میں گھسیٹ کر اپنی سیاست کر رہے ہیں،سبھی کا خون شامل ہے پاکستان کی مٹی میں یہ پاکستان کسی کے باپ کا نہیں سب کا ہے سب نے قربانیاں دی ہیں۔

. مودی کو مس کالیں کون مارتا تھا،کیا وہ غدار ہے؟ ن لیگ بھی وزیراعظم کیخلاف کھل کر میدان میں آ گئی ..

dadaddadd

اپنا تبصرہ بھیجیں