مارکیٹ سے خریدے گئے ڈالرز فارن کرنسی اکاؤنٹ میں منتقل نہیں ہو سکیں گے، وزارت خزانہ نے نئے قوانین متعارف کروا دیے

کراچی(این این آئی) حکومت نے زرمبادلہ کے ذخائر کو مستحکم رکھنے کیلئے ایس آر او کے ذریعے فارن کرنسی کے انفرادی اکاؤنٹ کے استعمال کو محدود کردیا۔حکومت نے پروٹیکشن آف اکنامک ریفارمز ایکٹ 1992 کے تحت زرمبادلہ کے

ذخائر کو مستحکم رکھنے کیلئے فارن کرنسی کے انفرادی اکاؤنٹ کے استعمال کو محدود کر دیا ہے۔ایس آر او کے مطابق فارن کرنسی انفرادی اکانٹ میں پاکستان سے اشیا یا خدمات کی برآمد کے بدلے رقم وصول نہیں کی جاسکے گی۔ نئی گائیڈ لائن کے تحت لسٹڈ سیکیورٹیز کی بیرون ملک خریدوفروخت کی رقم بھی فارن کرنسی انڈیوجیول اکانٹ کے تحت نہیں لائی جاسکے گی۔ایس آر او کے مطابق اسی طرح بیرون ملک قرضہ لی گئی رقم کی وصولی میں بھی فارن کرنسی انڈیوجیول اکاؤنٹ استعمال نہیں ہوگا۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نئے قوانین کے تحت منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لئے مارکیٹ سے خریدے گئے ڈالرز فارن کرنسی اکاؤنٹ میں منتقل نہیں ہو سکیں گے۔

. مارکیٹ سے خریدے گئے ڈالرز فارن کرنسی اکاؤنٹ میں منتقل نہیں ہو سکیں گے، وزارت خزانہ نے نئے قوانین متعارف کروا دیے ..

dadaddadd

اپنا تبصرہ بھیجیں