آل پارٹیز کانفرنس میں اداروں پر براہ راست تنقید، وزیر اعظم عمران خان کے رد عمل نے قوم کو خوش کر دیا

اسلام آباد ( نیوزڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے ترجمانوں اور وزراء سے اجلاس میں گفتگو کی ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اے پی سی کے فیصلے سے کسی کو پریشانی نہیں۔اے پی سی میں بیٹھے چہروں اور ان کے ذاتی مقاصد سے قوم آگاہ ہے۔اے پی سے کے فیصلوں کا دلیل اور

منطق کے ساتھ دفاع کیا جائے۔وزیراعظم نے حکومتی وزراء اور ترجمانوں کو حکومتی نقطہ نظر سے آگاہ کیا۔شبلی فراز،اسد عمر اور فواد چوہدری اے پی سی کے بیانیے پر پر حکومتی نقطہ پیش کریں گے۔وزیراعظم نے مزید کہا کہ جمہوری نظام میں لیڈ ہمیشہ حکومت کر رہی ہوتی ہے۔باقی تمام ادارے حکومت کے تابع رہ کر کام کرتے ہیں۔ملک کے تمام ادارے اپنی آئینی حدود میں رہ کر کام کر رہے ہیں،اپوزیشن کی اداروں پر تنقید اپنی کرپشن سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے۔پہلے بلیک میل ہوئے نہ اب ہوں گے۔پوری قوم اپنے اداروں کے ساتھ کھڑی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے اعلان کیا ہے کہ احتساب کا عمل جاری رہے گا،ادارے ایک پیج پر ہیں اور ملک کے اتحاد کی ضمانت ہیں۔واضح رہے کہ ق گذشتہ روز سابق وزیراعظم نواز شریف نے ویڈیو لنک کے ذریعے اے پی سے خطاب کیا ۔ اے پی سی پر نواز شریف کا خطاب دیکھنے اور سننے کیلئے بڑی سکرین کا اہتمام کیا گیا۔ سابق وزیر اعظم محمد نوازشریف نے کہا ہے کہ اپوزیشن کی جدوجہد عمران خان کے خلاف نہیں ان کو اقتدار میں لانے والوں کے خلاف ہے ۔نواز شریف کی تقریر سے سیاسی میدان میں ایک ہلچل مچ گئی ہے۔ تاہم اب اے پی سی اور سابق وزیراعظم نواز شریف کی تقریر کے بعد حکومت بھی متحرک ہو گئی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کابینہ کا اجلاس طلب کر لیا ہے۔وفاقی کابینہ آل پارٹیز کانفرنس کے حکومت مخالف فیصلوں کا جائزہ لے گی۔

dadaddadd

اپنا تبصرہ بھیجیں