کورونا ویکسین میں حرام اجزا کی آمیزش کا معاملہ اہم فتویٰ جاری کر دیا گیا

ابوظہبی(پی این پی) متحدہ عرب امارات کے فتویٰ کونسل نے شیخ عبد اللہ بن بیہہ کی سربراہی میں ایک فتویٰ جاری کیا ہے جس میں انسانی جسم کے تحفظ اور دیگر متعلقہ اسلامی احکام کے بارے میں اسلامی شریعت کے مقاصد کی تعمیل میں انسداد کورونا ویکسین استعمال کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔

سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق یہ فتویٰ کرونا ویکسین کی حلال حیثیت کے بارے میں مسلمانوں میں بڑھتے ہوئے خدشات اور ملائیشیا کے وزیر مذہبی امور کے اسی موضوع پر متحدہ عرب امارات کے فتویٰ کونسل کی مشاورتی رائے کی درخواست کے کے جواب میں دیا گیا ہے۔ فتویٰ کونسل نے وضاحت کی ہے کہ اسلامی اصولوں کے مطابق کرونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین کی درجہ بندی حفاظتی دوائیوں کے تحت کی جاتی ہے خاص طور پر وبائی امراض کے اوقات میں جب صحت مند افراد کے بھی اس بیماری میں مبتلا ہونے کا زیادہ خطرہ ہو اور اس وباء کا پورے معاشرے میں پھیلنے کا خطرہ ہو۔ فتویٰ کونسل نے مزید کہا ہے کہ اگرچہ اس ویکسین میں ایسے غیر حلال اجزاء شامل ہیں جو اسلام میں مانع ہیں تاہم اسلامی قوانین کے مطابق کوئی متبادل نہ ہونے کی صورت میں ایسی مصنوعات کے استعمال کی اجازت ہے۔ کونسل نے اس بیماری کی انتہائی متعدی نوعیت کو اس کے استعمال کا جواز بتاتے ہوئے کہا ہے کہ اس وباء کے سنگین

نتائج سے دوچار ہونے کے خطرے سے بچنے کیلئے اس کا استعمال جائز ہے۔ کونسل نے کہا کہ متعلقہ طبی اور دیگر مجاز حکام ویکسین کے مضر اثرات کا اندازہ لگانے کے مجاز ہیں۔ کونسل نے عوام سے ویکسیئن لگانے کی مہم کی کامیابی کو یقینی بنانے کے لئے متعلقہ حکام سے تعاون کرنے اور احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد کرنے کی اپیل کی ہے۔

. کورونا ویکسین میں حرام اجزا کی آمیزش کا معاملہ اہم فتویٰ جاری کر دیا گیا ..

dadaddadd

اپنا تبصرہ بھیجیں