جی ڈی پی 5.5 سے کم ہو کر 0.4 فیصد رہ گئی ، موجودہ حکومت نے 72 سالہ تاریخ میں سب سے زیادہ قرضے لئے، مفتاح اسماعیل حقیقت سامنے لے آئے

کراچی(این این آئی)پاکستان مسلم لیگ(ن) سندھ کے جنرل سیکرٹری اور سابق وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ مسلم لیگ حکومت میں جی ڈی پی 5.5 سے بڑھ رہی تھی۔ آج جی ڈی پی 0.4 فیصد رہ گئی، حکومت نے 72 سال کی تاریخ میں سب سے زیادہ قرضہ

لیا۔سٹی کورٹ کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مفتاح اسماعیل نے کہا کہ جب مسلم لیگ حکومت چھوڑ گئی تو جی ڈی پی 5.5 سے بڑھ رہی تھی۔ آج جی ڈی پی 0.4 فیصد رہ گئی ہے۔ پاکستان کی قومی گروتھ کم ہوگئی ہے۔ حکومت نے ٹیکس کلیکشن بڑھانے کے بجائے کم کی ہے۔انہوں نے کہا کہ دو سالوں میں 11 ہزار ارب قرضہ لیا گیا ہے۔ 72 سال کی تاریخ میں سب سے زیادہ قرضہ ہے۔ موجودہ حکومت نے پوری قوم کو مقروض کردیا ہے۔ امپورٹ میں بھی کمی ہوگئی ہے۔ حکومت نے اسکول، کالج، یونیورسٹی، مشینری اور انڈسٹریل سیکٹر کا فنڈ بھی کم کردیا گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ 49لاکھ لوگ بے روزگار ہوگئے ہیں۔ حکومت نے خبردار کیاکہ سردیوں میں گیس کی کمی ہو جائے گی۔ حکومت کا کام گیس کم کرنا نہیں بلکہ گیس کی پیداوار بڑھانا ہے۔ دو سال کے دوران ایک میٹر پائپ لائن نہیں لگائی گئی۔مفتاح اسماعیل نے کہا کہ اس بار پی ٹی آئی کراچی جیت گئی تھی۔ نہ پی ٹی آئی کچھ کیا نہ پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم نے کچھ کیا ہے۔ ایم کیو ایم کے پاس جھنڈے لگانے کے پیسے ہیں لیکن کراچی میں خرچ کرنے کیلئے پیسے نہیں۔ ایم کیو ایم والے فیڈرل بی ایریا سے ڈیفینس تک پہنچ گئے لیکن کام نہیں کیا، کراچی والے ایک بار ن لیگ کا ساتھ دیں۔

. جی ڈی پی 5.5 سے کم ہو کر 0.4 فیصد رہ گئی ، موجودہ حکومت نے 72 سالہ تاریخ میں سب سے زیادہ قرضے لئے، مفتاح اسماعیل حقیقت سامنے لے آئے ..

dadaddadd

اپنا تبصرہ بھیجیں